20

اسحاق ڈار کا جسٹس اطہرمن اللہ کے بیان پر تبصرے سے گریز

تفصیلات کے مطابق نائب وزیراعظم اسحاق ڈار نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جسٹس اطہرمن اللہ کے بیان پر سوال پر تبصرے سے گریز کرتے ہوئے کہا کہ جسٹس اطہر من اللہ نے وزیراعظم کو جو جواب دیا اس پر وزیراعظم سے پوچھیں ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کو ٹیک آف کرنے کے دوران کتنی بار گرانا ہے ،ہم پاکستان کو کئی بار ٹیک آف کرتےگراچکے اب بہت ہوچکا مذاکرات کے حوالے سے نائب وزیراعظم نے کہا کہ جو ریاست کے خلاف کھڑا ہوگا اس سے مذاکرات نہیں ہوں گے، مذاکرات اور مفاہمت پر میرا پختہ یقین ہے ، اسی پارلیمنٹ کے سامنے 126 دن کے دھرنے کو مذاکرات سے اٹھایا تھا ،سیاست میں مفاہمت اور مذاکرات ہوتے ہیں اور ہونے چاہئیں سانحہ 9مئی سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ سانحہ 9 مئی ریاست کے خلاف تھا، جی ایچ کیو ، جناح ہاؤس ،تنصیبات پر حملہ کرنے پر کوئی معافی نہیں دے سکتا، فارمیشن کمانڈرز کانفرنس نے جس مؤقف کا اظہار کیا وہ ہر پاکستانی کا مؤقف ہے ،سانحہ 9مئی میں ملوث عناصر کے لیے کوئی رعایت مناسب نہیں انھوں نے مزید کہا کہ خیبرپختونخواکا بجٹ وفاقی بجٹ سے پہلے منظور ہونا معمول سے ہٹ کر ہے ، چار وفاقی اکائیوں کا بجٹ مل کر وفاق کا بجٹ بنتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں