44

اندرون بلوچستان بنیادی مراکز صحت کی عمارتیں ذاتی بیٹھکوں کے طور پر استعمال ہونے کا انکشاف

کوئٹہ: وزیر اعلیٰ بلوچستان سرفراز بگٹی کی زیر صدارت محکمہ صحت کے جائزہ اجلاس میں اندرون بلوچستان بنیادی مراکز صحت کی عمارتیں ذاتی بیٹھکوں کے طور پر استعمال ہونے کا انکشاف کیا گیا تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے محکمہ صحت کے جائزہ اجلاس میں یہ بات سامنے آئی کہ اندرون بلوچستان بنیادی مراکز صحت کی عمارتیں ذاتی بیٹھکوں کے طور پر استعمال ہو رہی ہیں وزیر اعلیٰ سرفراز بگٹی نے سخت نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ ہم غیر ضروری منصوبوں پر مزید عوامی وسائل ضائع نہیں کر سکتے، طے شدہ کرائیٹیریا پر پورا نہ اترنے والے بنیادی مراکز صحت وسائل پر بوجھ بنے ہوئے ہیں، انھوں نے ہدایت کی کہ ایسے تمام غیر فعال مراکز صحت بند کر دیے جائیں وزیر اعلیٰ بلوچستان نے تمام ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر اسپتالوں میں 10 روز میں سرجنز کی تعیناتی کی بھی ہدایت کی، اور کہا اسپتالوں میں پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے لیے 30 دن میں جامع ایکشن پلان تشکیل دیا جائے، نیز تمام اسپتالوں میں ادویات کی بلا تعطل فراہمی بھی یقینی بنائی جائے سرفراز بگٹی نے ہیلتھ سیکٹر کے ترقیاتی منصوبوں کے لیے 1 ارب روپے کی پیشگی ادائیگی پر بھی اظہار برہمی کیا، اور کہا کہ ادائیگی کرنے کے باوجود کوئی کام نہیں ہوا ہے، اس لیے ذمہ داری کا تعین کر کے ان کے خلاف ایف آئی آر کی جائے، اور اینٹی کرپشن تحقیقات کر کے ملوث ذمہ داران کو گرفتار کرے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں