46

18ویں ترمیم کے تاریخ ساز لمحے کو 13 برس مکمل ضیا ء الحق کا نام بطورصدر آئین کے متن سے ہٹا دیا گیا ،صوبہ سرحد کا نام خیبر پختونخوا ہ رکھا گیا پرویز مشرف کے ذریعہ پیش کردہ 17 ویں ترمیم اور قانونی فریم ورک آرڈر کو منسوخ کر دیا گیا

لاہور: سابق صدر مملکت آصف علی زرداری کے دستخط کے ساتھ 19 اپریل 2010 کو 18ویں ترمیم کے تاریخ ساز لمحے کو 13 برس مکمل ہوگئے۔آئین پاکستان میں اٹھارہویں ترمیم کو 8 اپریل 2010 کو پاکستان کی قومی اسمبلی نے منظور کیا، یہ ترمیمی بل 15 اپریل 2010 کو سینیٹ آف پاکستان نے منظور کیا تھا جس کے بعد اس وقت کے صدر مملکت آصف علی زرداری نے اس پر دستخط کئے تھے۔اٹھاوریں آئینی ترمیم میں ڈکٹیٹر جنرل ضیا ء الحق کا نام بطور صدر آئین کے متن سے ہٹا دیا گیا ہے۔ صوبہ سرحد کا نام خیبر پختونخوا ہ رکھا گیا، ڈکٹیٹر پرویز مشرف کے ذریعہ پیش کردہ 17 ویں ترمیم اور قانونی فریم ورک آرڈر کو منسوخ کر دیا گیا، تیسری بار وزارت عظمی اور وزرائے اعلی کی عہدے پر پابندی ختم کردی گئی جبکہ آئین شکنی کو غداری قرار دیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں