16

سندھ :کی سرکاری جامعات نے وزیر اعظم سے 16 ارب روپے مانگ لیے بانٹیں انور خان

کراچی: سندھ کی سرکاری جامعات کے وائس چانسلرز نے صوبے کی جامعات کو ڈیفالٹ سے بچانے کے لیے وزیر اعظم شہباز شریف سے 16 ارب روپے مانگ لیے ہیں بدھ کو 21 جامعات کے وائس چانسلرز نے ہنگامی اجلاس کے بعد وزیر اعظم کو اپنے دستخطوں سے لکھے گئے خط میں کہا کہ پبلک سیکٹر کی 29 جامعات سمیت پاکستان بھر کی صوبائی جامعات کو وفاقی حکومت کی گرانٹ روکے جانے پر انھیں شدید تشویش لاحق ہے انھوں نے کہا کہ وفاقی حکومت ہائر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی) کے ذریعے سندھ کی جامعات کو 13 ارب روپے سے زیادہ فراہم کرتی ہے اور یہ رقم سندھ کی جامعات کے لیے 2018 کے بعد سے تقریباً منجمد ہے خط میں کہا گیا ہے کہ ہمیں آپ کے وزیر اعظم بننے کے بعد امیدیں وابستہ تھیں کہ آپ کی قیادت میں حکومت جامعات اور اعلیٰ تعلیمی اداروں کو مستحکم کرنے اور معاونت فراہم کرنے کے لیے ضروری اقدامات کرے گی خط میں کہا گیا کہ کسی دوسرے شعبے میں سرمایہ کاری کے مقابلے میں تعلیم میں سرمایہ کاری کا منافع زیادہ ہے، جن قوموں نے ترقی کی ہے یا جن کی ترقی ہوئی ہے انھوں نے تعلیم اور اعلیٰ تعلیم میں سرمایہ کاری کی ہے، چین، کوریا، ملائیشیا، بھارت اور خطے کے کئی دوسرے ممالک اس کی مثالیں ہیں خط میں کہا گیا کہ موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے پاکستان میں مالیاتی بحران کے منظر نامے میں تعلیم خصوصاً اعلیٰ اور تکنیکی تعلیم میں سرمایہ کاری کو بڑھانا دانش مندانہ فیصلہ ہوگا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں