17

رہنما پیپلز پارٹی کا اسلام آباد میں پی ٹی آئی دفتر گرانے پر ردعمل

اسلام آباد : رہنما پیپلز پارٹی حسن مرتضیٰ نے اسلام آباد میں پی ٹی آئی دفتر گرانے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ رات کے اندھیرے میں کسی کا گھر یا دفتر گرادینا مناسب طریقہ کار نہیں ہے تفصیلات کے مطابق رہنما پیپلز پارٹی حسن مرتضیٰ نے میڈیاکے پروگرام باخبر سویرا میں پی ٹی آئی دفتر گرانے پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ رات کے اندھیرے میں کسی کا گھر گرا دینا مناسب طریقہ کارنہیں، سی ڈی اےآپریشن کا یہ وقت ٹھیک نہیں تھا، سب کوساتھ لیکرچلنا ہے حسن مرتضیٰ کا کہنا تھا کہ پی پی کی ہمیشہ کوشش رہی ہےسب کو ساتھ لیکرچلاجائے، اُس عمارت میں کوئی چیزتھی بھی تو پہلے بتانا چاہیے تھا رہنما پی پی نے کہا کہ پی ٹی آئی کے اپنےدورمیں کسی کی ادراورچاردیواری محفوظ نہیں تھی، آپ کس کو عام معافی دے رہے ہیں، 9 مئی پریہ خود معافیاں مانگتے رہے ہیں جب تک آپ اپنے رویےدرست نہیں کرینگے،درست سمت نہیں جاسکتے پی ٹی آئی کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ بڑے بڑے لوگ اکٹھے ہوکرفیصلہ کرتےہیں، تھوڑی بہتری آناشروع ہوئی تو عدالتوں سے لوگوں کوریلیف ملنا شروع ہوا ہے، آپ کا دعویٰ ہے آپ جمہوری لوگ ہیں لیکن یہ جمہوری رویہ نہیں حسن مرتضیٰ نے اداروں کی نجکاری سے متعلق سے کہا کہ ادارے ختم نہیں کئے جاتے،ادارے مضبوط کئے جاتے ہیں، بہتر بنایا جاتاہے، تھوڑی سی خرابی ہو تو ہم ادارے کو اونے پونے بیچتے ہیں،یہ کونساطریقہ ہے، پی پی کی قیادت نے11،11سال جیلیں کاٹی ہیں ہتک عزت بل کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی کبھی ہتک عزت بل کاحصہ نہیں بنےگی، ہتک عزت بل کے ذریعے صحافیوں پر پابندیاں ٹھیک نہیں، بل کااتنی عجلت میں فیصلہ کیوں کیاگیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں