17

حکومت آئی ایم ایف کے ڈالروں کیلیے فلسطین کا سودا کر رہی ہے، مشتاق احمد خان

غزہ بچاؤ مہم کے دوران حمیرا طیبہ کے ہمراہ پریس کانفرنس مین مشتاق احمد خان نے کہا کہ غزہ میں بم برسائے جا رہے ہیں لیکن دنیا مظالم دیکھ رہی ہے مشتاق احمد خان نے مطالبہ کیا کہ امریکا اسرائیل کو اسلحہ دینا بند کرے، امریکا نے 46 مرتبہ ویٹو کا حق اسرائیل کیلیے استعمال کیا، غزہ کی صورتحال پر او آئی سی کا کردار بھی قابل مذمت ہے انہوں نے کہا کہ مصر اور ترکیہ اب انٹرنیشنل کورٹ جا رہے ہیں پہلے کیوں نہ گئے، رفح میں 15 لاکھ لوگ محصور ہیں جہاں کھانے پینے کا سامان موجود نہیں مہنگی بجلی کیخلاف احتجاج پر جماعت اسلامی کی قیادت پر مقدمہ درج حمیرا طیبہ نے پریس کانفرنس میں کہا کہ ریاست کو اپنا کردار ادا کرنے کی ضرورت ہے، فلسطین کے بند راستے کھلوانا ریاستوں کی ذمہ داری ہے، جنوبی افریقا کے ساتھ مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے گزشتہ ہفتے دارالحکومت اسلام آباد میں مظلوم فلسطینیوں کے حق میں مارچ کرنے پر جماعت اسلامی پاکستان کی قیادت سمیت طلبہ و طالبات کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا تھا درج مقدے میں دھمکیوں، ریاست مخالف تقاریر اور قانون توڑے کی دفعات شامل کی گئیں۔ ایف آئی آر میں رہنما جماعت اسلامی پاکستان سابق سینیٹر مشتاق احمد خان، کاشف چوہدری، نصراللہ رندھاوا و دیگر کو نامزد کیا گیا تھاایف آئی آر میں کہا گیا تھا کہ نامزد افراد نے 500 لوگوں کے ہمراہ جلوس نکالا جبکہ جلسے جلوس کے حوالے سے دفعہ 144 نافذ ہے، شرکا کو منتشر ہونے کا کہا گیا تھامتن کے مطابق شرکا سہروری روڈ سے ریڈ زون کی طرف گئے اور اندر داخل ہونے کی کوشش کی، شرکا نے حصار کو توڑا اور پولیس سے ہاتھا پائی کی اس میں مزید کہا گیا تھا کہ شرکا نے سہروردی روڈ پر دھرنا دیا اور عوام کیلیے مشکل پیدا کی، نامزد افراد نے ریاست مخالف تقاریر کیں اور دھمکیاں دیں سابق سینیٹر مشتاق احمد خان نے مقدمہ درج ہونے پر اپنے ردعمل میں فیس بک پر جاری بیان میں کہا تھا کہ 15 لاکھ محصورین غزہ کو بچانے کیلیے غزہ یکجہتی مارچ، فلسطینیوں کی نسل کشی اور اس میں ملوث امریکا کے خلاف احتجاج کیلیے امریکی سفارتخانے تک جانے کی پاداش میں وفاقی حکومت اور اسلام آباد پولیس کی طرف سے ایک اور مقدمہ درج کیا گیا مشتاق احمد خان نے کہا تھا کہ کل پولیس نے بدترین لاٹھی چارج اور تشدد کیا لیکن اس کے باوجود ’سیو غزہ‘ دھرنا اپنے پروگرام کے مطابق صبح تک جاری رہا، رفع میں 15 لاکھ محصورین کو بچانے، اسرائیل کی انسانیت کے خلاف جرائم اور امریکا کی فلسطینیوں کی نسل کشی کی سرپرستی، پاکستانی حکمرانوں کی مجرمانہ خاموشی اور سہولت کاری کے خلاف احتجاج جاری رہے گا انہوں نے کہا تھا کہ جھوٹے مقدمات، قید و بند، لاٹھی گولی اور تشدد سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ رہنما جماعت اسلامی نے اپنے فیس بک اکاؤنٹ سے ایف آئی آر کی کاپی بھی جاری کی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں