43

این آر او 2022 کو بچانے کیلئے سپریم کورٹ کو نشانہ بنایا جا رہا ہے،فواد چوہدری ن لیگ کی اندرونی سیاست مذاکرات کو نقصان پہنچا رہی ہے،عدالت عظمٰی کے فیصلے پر عمل نہ ہوا تو ملک کے مستقبل کا فیصلہ سڑکوں پر ہو گا،رہنما تحریک انصاف کی پریس کانفرنس

اسلام آباد: تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدرری کا کہنا ہے کہ مریم نواز اور ن لیگ کی مہم نیب ترامیم کی سماعت کرنے والے بینچ کی تحلیل کیلئے ہے،نیب ترامیم کیس وہ طوطا ہے جس میں نواز شریف،مریم نواز اور حسن نواز کی جان ہے۔ تفصیلات کے مطابق فواد چوہدری نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے پر عمل نہ ہوا تو ملک کے مستقبل کا فیصلہ سڑکوں پر ہو گا،ن لیگ کی اندرونی سیاست مذاکرات کو نقصان پہنچا رہی ہے۔نیب ترامیم کالعدم ہو گئیں اور مقدمات بحال ہو گئے تو ان کی اقتدار میں دلچسپی ختم ہو جائے گی،این آر او 2022 کو بچانے کیلئے سپریم کورٹ کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ سپریم کورٹ کے 8 ججز ن لیگ کے نشانے پر ہیں،یہ تمام مہم صرف ایک مقصد کیلئے ہو رہی ہے،انکا مقصد ہے کہ چیف جسٹس کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ تحلیل ہو،ن لیگ میں مرضی کے بینچ بنوانے کا شوق پرانا ہے۔رہنما پی ٹی آئی نے کہا کہ عدالتیں آئین اور قانون کے مطابق فیصلہ دیں،عملدرآمد کرائیں گے،آئین کو بچانے سپریم کورٹ کی ذمہ داری نہیں عوام کی بھی ہے۔عوام کو اپنے حقوق کیلئے گھر سے باہر نکلنا ہو گا،اس وقت کا عدلیہ کا مقابلہ ایک مافیا سے ہے۔ ملک کی 96 بار ایسوسی ایشنز سپریم کورٹ کے حق میں قرار دادیں منظور کر چکی ہیں،پورا پاکستان سپریم کورٹ کے ساتھ کھڑا ہے،ججز بلیک میلنگ میں نہ آئیں۔انکا کہنا تھا کہ آئین نہیں رہتا اور سپریم کورٹ کے فیصلے پر عمل نہیں ہوتا تو عوام فیصلے کریں گے۔ فواد چوہدری نے الیکشن کمیشن حکام پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اوورسیز پاکستانی ووٹ کے حق سے محروم ہیں تو اس کے ذمہ دار چیف الیکشن کمنشر ہیں،الیکشن کمیشن میں مرضی کی تعیناتیاں کی جا رہی ہیں۔ ایک طرف کہتے ہیں زہر کھانے کے پیسے نہیں تو دوسری جانب الیکشن کمیشن کے دفتر پر 6 کروڑ لگا دئیے گئے،چیف الیکشن کمشنر کو عہدے سے ہٹایا جائے۔ موجودہ چیف الیکشن کمشنر جب سے بیٹھے ہیں عہدے کا وقار کم کیا ہے۔ انہوں نے سوال کیا کہ پیپلز پارٹی اور ن لیگ کے فںڈنگ کیس کہاں ہیں؟صرف تحریک انصاف کے لوگوں پر کیسز چلانے کا تماشہ لگا ہوا ہے،شفاف الیکشن نہ کرانے میں الیکشن کمیشن کا ہاتھ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں