33

آئین کی پاسداری کیلئے مختلف سیاسی جماعتوں سے رابطہ کریں گے،شاہ محمود قریشی کل کراچی جاؤں گا اور جی ڈی اے کی قیادت سے ملاقات ہو گی،آئین پر عمل نہ کیا گیا تو ملک کو بہت نقصان ہو گا،وائس چیئرمین تحریک انصاف

لاہور: تحریک انصاف نے آئین کی پاسدای کیلئے مختلف سیاسی جماعتوں سے رابطے کا فیصلہ کیا ہے۔ وائس چیئرمین تحریک انصاف شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ ایم کیو ایم پاکستان سے رابطہ کیا ہے،سندھ کی دیگر سیاسی جماعتوں اور جماعت اسلامی سے کل بات ہو گی۔ تفصیلات کے مطابق شاہ محمود قریشی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت آئین پر حملہ کر رہی ہے اور ہم آئین پر عمل چاہتے ہیں،آئین پر عمل نہ کیا گیا تو ملک کو بہت نقصان ہو گا۔مجھ پر الزام ہے میں نے لوگوں کو اکسایا،میں اکسانے والوں سے نہیں سمجھنے والوں میں سے ہوں۔ انہوں نے بتایا کہ کل کور کمیٹی میٹنگ میں انتخابات ملتوی کیس کی آپ بیتی بیان کی۔ مطالبہ کیا جا رہا تھا کہ کیس کی سماعت کیلئے فل کورٹ بنائیں،چیف جسٹس پاکستان نے رولز اور قوانین کے تحت 3 رکنی بینچ بنایا،بیرسر علی ظفر نے عدالت میں پی ٹی آئی کا نقطہ نظر پیش کر دیا ہے،آئین کے دفاع کیلئے وکلاء اور ججز کے ساتھ کھڑے ہیں۔انکا کہنا تھا کہ عمران خان ایک بار پھر اصولی لڑائی لڑنے نکلے ہیں،آئین کی پاسداری کیلئے مختلف سیاسی جماعتوں سے رابطہ کریں گے،ایم کیو ایم پاکستان سے رابطہ کیا ہے،سندھ کی دیگر سیاسی جماعتوں اور جماعت اسلامی سے کل بات ہو گی۔ شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ عمران خان نے مجھے اور پرویز الٰہی کو ذمہ داری سونپی ہے،کل کراچی جاؤں گا اور جی ڈی اے کی قیادت سے ملاقات کروں گا،پی پی ہمیشہ آئین کی بات کرتی تھی اب خاموش کیوں ہے؟ یاد رہے کہ اس سے قبل شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس پاکستان مسلم لیگ ن کی خواہشات کے نہیں بلکہ آئین اور قانون کے پابند ہیں،،فل کورٹ کا اختیار چیف جسٹس کے پاس ہے،سپریم کورٹ کے قوانین اور انداز کا احترام کرنا چاہیے۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پی ٹی آئی کور کمیٹی کا اجلاس زمان پارک طلب کیا گیا۔ہمیں کیسز اور عدالتوں میں الجھا کر انتخابی مہم سے روکنے کی کوشش ہورہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں