18

خیبرپختونخوا حکومت آئندہ مالی سال کا بجٹ آج پیش کرے گی

پشاور : خیبرپختونخوا حکومت آئندہ مالی سال کا بجٹ آج پیش کرے گی ، بجٹ کا مجموعی حجم پندرہ سے سولہ کھرب کےدرمیان ہوگا تفصیلات کے مطابق خیبرپختونخوا اسمبلی میں آئندہ مالی سال کا سولہ کھرب روپے تک کابجٹ آج پیش ہوگا، کابینہ کی منظوری سےوزیرخزانہ آفتاب عالم سال دوہزارچوبیس پچیس کابجٹ اسمبلی میں پیش کریں گے بجٹ میں ملازمین کی تنخواہوں میں دس سےپندرہ فیصد اضافہ ہوگا جبکہ ترقیاتی منصوبوں کیلئےتین سوارب روپےرکھےجائیں گے بجٹ میں بیس فیصد فنڈ بلدیاتی حکومتوں کودینےکی تجویزہے تاہم ضم اضلاع میں کوئی ٹیکس نہیں لگے گا جبکہ آئی ایم ایف کے مجوزہ ٹیکس نظرانداز کردئیے گئے ہیں خیبرپختونخوا کے مالی سال 25-2024 کے بجٹ کی تجاویز کی دستاویز سامنے آگئی ، جس میں بتایا ہے کہ کےپی بجٹ کے حجم کا تخمینہ 1754 ارب روپے ہے اور بجٹ 100 ارب روپے سرپلس رکھنے کی تجویز دی گئی ہے دستاویز میں کہا ہے کہ مجموعی اخراجات کیلئے1654 روپے مختص کرنے، ضم اضلاع کیلئے144 ارب روپے ، ترقیاتی بجٹ کیلئے 259 ارب روپے، صوبائی سالانہ ترقیاتی پروگرام کیلئے120 ارب روپے، ضم اضلاع کےسالانہ ترقیاتی پروگرام کیلئے36 ارب روپے، ایکسیلریٹڈ امپلی منٹیشن پروگرام کیلئے79 ارب روپے اور فارن پروگرام اسسٹنس مد میں 130 ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے دستاویز کے مطابق صوبے سے باہرکی گاڑیوں کی رجسٹریشن پر ٹیکس کی تجویزہے جبکہ انڈسٹریز کو ریلیف دینے کیلئے فلیٹ ریٹ اور گاڑیوں کی رجسٹریشن فیس میں کمی کی جائےگی اس کے علاوہ تمباکو پر ایکسائز ڈیوٹی لگا کر حاصل رقم صحت کے شعبے پر خرچ ہوگی جبکہ ترقیاتی کاموں کیلئے 300 ارب، ڈھائی سال بعد مقامی حکومت کو ترقیاتی فنڈ کا 20 فیصد مختص کرنے اور صحت کارڈ کیلئے 28 ارب سےزائد رکھنے کی تجویز ہے دستاویز میں کہا گیا ہے کہ کامیاب نوجوان پروگرام کے تحت آسان شرائط پر قرضے اور قرضوں کیلئے 10ارب روپے رکھنے کی تجویزہے، تین سال سے خالی اسامیاں پُر کرنے کے بجائے ختم کرنے اورچشمہ رائٹ بینک کینال منصوبے کیلئے 2 ارب روپے مختص کرنے کی تجویز دی گئی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں