19

امریکا نے اسرائیل، یوکرین، تائیوان کے لیے 95 ارب ڈالر کا امدادی بل منظور کر لیا

روئٹرز کے مطابق امریکی ایوان نمائندگان نے ہفتے کے روز پچانوے بلین ڈالر کا پیکج منظور کر لیا ہے جس کے تحت یوکرین، اسرائیل اور تائیوان کو سیکیورٹی امداد فراہم کی جائے گی، سخت گیر ریپبلکنز کے اعتراضات کے باوجود دونوں طرف کے اراکین کی اکثریت نے بل کی حمایت کی امریکی ایوان نمائندگان میں یوکرین کے لیے 61 ارب ڈالر کا امدادی بل منظور کیا گیا جس میں 23 ارب ڈالر فوجی اسلحہ اور ساز و سامان کے لیے وقف کیے گئے ہیں اسرائیل کے لیے 26 ارب ڈالر کا امدادی پیکج منظور کیا گیا ہے جس میں 9 ارب ڈالر انسانی ضروریات کی مد میں رکھے گئے ہیں، اسرائیلی میڈیا کا کہنا ہے کہ امریکی امداد میں 14 ارب ڈالرز کی فوجی امداد بھی شامل ہے 8 ارب ڈالر کا امدادی پیکج تائیوان سمیت ایشیا پیسفک کے لیے وقف کیا گیا ہے۔ یہ بل منظوری کے بعد اب سینیٹ میں جائے گا، جہاں دو ماہ قبل اسی طرح کا ایک اقدام پہلے بھی منظور کیا گیا تھا، روئٹرز کے مطابق سینیٹ منگل کو ایوان سے منظور شدہ اس بل پر غور شروع کرے گا روس اور یوکرین کا رد عمل یوکرین کے لیے امریکی امدادی بل کی منظوری پر روس نے شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے، روس نے خبردار کیا کہ امریکا کی طرف سے یوکرین کے لیے امداد کی منظوری یوکرین کو مزید تباہ کر دے گی دوسری طرف یوکرین کے صدر ولودیمیر زیلنسکی نے شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ امریکی قانون ساز تاریخ کو صحیح راستے پر گامزن کرنے کے لیے آگے بڑھے ہیں، زیلنسکی نے X پر لکھا آج ایوان سے منظور کیا گیا اہم امریکی امدادی بل جنگ کو پھیلنے سے روکے گا، اور ہزاروں جانیں بچائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں