وزیر اعظم بتائیں 20 ارب روپے کہاں تقسیم کیے؟ نومبر میں ہونے والی تعیناتی چوروں کے ہاتھ سے نہیں ہونی چاہیئے، بابر اعوان

اسلام آباد : پاکستان تحریک انصاف پی ٹی آئی کے رہنما بابر اعوان نے کہا ہے کہ وزیر اعظم بتائیں 20 ارب روپے کہاں تقسیم کیے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما بابر اعوان کا کہنا تھا کہ معاشی طور پر ملک کو ناقابل علاج بنایا جا رہا ہے ہمالیہ سے گہری دوستی والے بھی پیسے دے دے کر تنگ آ گئے ہیں ہر جگہ جا کر پیسے مانگتے ہیں پھر کہتے ہیں مانگنے نہیں آیا بابر اعوان کا کہنا تھا کہ 20 ارب روپے کن سیلاب متاثرین میں تقسیم کئے کسی کے پاس فہرست نہیں سندھ حکومت نے 8 ارب روپے تقسیم کرنے کا دعوی کیا ہے، انہوں نے 8 آلو یا 8 کیلے بھی تقسیم کئے ہوتے تو لوگ روٹی کھا سکتے تھے تحریک انصاف کے رہنما کا کہنا تھا کہ صدر عارف علوی نے نیب ترامیم کا راستہ روکے رکھا شہباز شریف کی سپیڈ منی لانڈرنگ اور پیسہ معاف کرانے کے کاموں پر ہے، این آر او ٹو کے نتیجہ میں 2400 ارب روپے کے ملزمان کو معافی مل گئی ہے بابر اعوان نے کہا کہ بیرون ملک سے آنے والے بڑے ملزمان کو فاسٹ ٹریک پر سہولیات ملتی ہیں نیب ترامیم سے شریف خاندان نے جو قرضے معاف کرائے تھے وہ جائز ہوگئے یکم جنوری 1985 سے پہلے کے بنک لوٹنے سمیت تمام جرائم معاف ہوگئے ہیں رہنماپی ٹی آئی نے مزید کہا کہ ترمیم کے تحت اہل خانہ کے اثاثے ملزم کے اثاثے تصور نہیں ہوں گے یہ ترمیم اسی کے لیے ہیں جو لندن دوائی لینے گیا تھا بیوی یا بچوں کے نام پر کرپشن کا اکاؤنٹ کھولے تو کچھ نہیں ہوگا بابر اعوان نے بتایا کہ آمدن سے زائد اثاثوں کا کیس اب نیب کو ثابت کرنا ہوگا ڈی سی نے اگر کسی بنگلے کی قیمت کروڑ کے بجائے کوڑیاں لگائی تو وہ حتمی تصور ہوگی ملزم سے برآمدگی کی صورت میں مال سپریم کورٹ فیصلے تک اسے واپس نہیں ملتا لیکن اب مال مسروقہ ملزم کو استعمال اور فروخت کرنے کی اجازت ہوگی فروخت ہونے کے بعد مال مقدمہ کسی اور کی ملکیت بن چکا ہوگا بابر اعوان کا کہنا تھا کہ عمران خان کے خلاف 21 مقدمات ہیں اتنے اسلام آباد میں بازار نہیں لگت اتنا دلیر آئی جی ہے کہ ایک تقریر سے ڈر گیا،بابر اعوان کسی نے مجھے کہا پراٹھا چائے میں ڈبونے پر بھی دہشت گردی کا کیس نہ بن جائے پراٹھے اور دال کی توہین پر بھی مقدمات بنانے کی تیاری ہو رہی ہوگی جھوٹا مقدمہ بنانے پر پانچ سال سزا ہے ی ٹی آئی کے رہنما نے کہا کہ نیب ترامیم کے تحت صرف تنخواہ دار اور دیہاڑی داروں پر ہی کیسز بن سکیں گے لاہور میں 76 افراد سے ایئرپورٹ سے ملحقہ زمین ہتھیا لی گئی، نیب ترامیم کے بعد 100 سے کم لوگوں کو لوٹنے پر مقدمہ نہیں بنے گا بابر اعوان نے کہا کہ لگتا ہے پی ڈی ایم کے سائز کے حساب سے درزی نے نیب قانون بنایا ہے 50 کروڑ سے ایک دھیلہ بھی کم لوٹا تو کرپشن کا کیس نہیں بنے گا اس ترمیم سے 42 مقدمات ختم ہو جائيں گے کئی احتساب عدالتیں خالی ہوگئی ہیں کیونکہ کیسز ہی ختم ہوگئے بابر اعوان کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم وزراء کا بھی لنڈا بازار لگا ہوا ہے اوریہ لنڈے کے وزیر کہتے ہیں ستمبر میں نوازشریف کو واپس لائیں گے نوازشریف سزا یافتہ ہیں واپسی پر جیل جانا ہوگا ایک وزیر نے کہا کہ نوازشریف بعد میں آئے گا کیسز پہلے ختم ہوں گے ترمیم کے بعد نیب قانون اب ڈکیت تحفظ بیورو بن گیا ہے بابراعوان نے کہاکہ جن ممالک میں ان کا پیسہ پڑا ہے وہاں مانگنے جاتے ہیں تو وہ ہنستے ہیں انجلینا جولی بھی کھانے کا ٹیبل دیکھ کر حیران ہوئی تھی اور کہا تھا کہ وزیراعظم کی فیملی سرکاری جہاز پر مجھے ملنے آئی تھی بابر اعوان نے کہا کہ مہنگائی ساتویں آسمان پر پہنچ گئی ہے بجلی کا بل مزید بڑھنے لگا ہے انتخابات کے بعد منتخب قیادت ہی ملک کو بحران سے نکال سکتی ہے انہوں نے کہا کہ کرکٹ میں کسی نے کہا عمران خان کا ڈر ہے لیکن عمران تو ہوگا الیکشن آئے گا تو اس میں بھی عمران تو ہوگا پی ٹی آئی کے بعد اپوزیشن لیڈر ایسا ہی ہے جیسے مشرف دور میں مولوی صاحب تھے

اپنا تبصرہ بھیجیں